کراچی میں مبینہ طور پر ہیپنا ٹائز کر کے خواتین سے زیادتی کا انکشاف

کراچی: کراچی میں مبینہ طور پر ہیپنا ٹائز کر کے خواتین سے زیادتی کا انکشاف، دو فروری کو پولیو ورکر کو مسلح افراد نے گاڑی میں بٹھایا اور گلزار ہجری لے جا کر زیادتی کی۔ پولیس نے اصل ملزم کے رشتہ دار کو گرفتار کر کے ملزم خالد کی تلاش شروع کر دی۔ 4 متاثرہ خواتین نے پولیس سے رابطہ کرلیا۔

کراچی سچل تھانے کی حدود میں مبینہ طور پر ہیپناٹائز کر کے کئی خواتین سے زیادتی کا انکشاف ہوا ہے، دو فروری کو پولیو ورکر مسرت سے زیادتی ہوئی۔ خاتون نے پولیس بیان میں کہا کہ وہ پیدل گھر جا رہی تھی۔ سپرہائی وے پر کار رکی جس میں دو مسلح لوگ سوار تھے۔ ملزم خالد نے زبردستی گاڑی میں بٹھایا جہاں پہلے ہی ایک لڑکی بیہوش موجود تھی۔ ملزم گلزار ہجری پر فلیٹ میں لے گیا اور زیادتی کی۔

متاثرہ خاتون کے شوہر کا کہنا ہے کہ چار خواتین کے ساتھ زیادتی ہوئی۔ سندھ اسمبلی میں پی ٹی آئی کے پارلیمانی رہنما حلیم عادل شیخ بھی سول ہسپتال پہنچے، پولیس نے ملزم خالد کے قریبی رشتے دار کو گرفتار کر کے ملزم کی تلاش شروع کر دی جبکہ متاثرہ خواتین کے میڈیکل ٹیسٹ کی کارروائی جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں