پاکستان سمیت دنیا بھر میں کشمیری و پاکستانی آج یوم یکجہتی کشمیر منا رہے ہیں۔

اسلام آباد: آزاد کشمیر، پاکستان سمیت دنیا بھر میں کشمیری و پاکستانی آج یوم یکجہتی کشمیر منا رہے ہیں۔ اسلام آباد، لاہور، کراچی، پشاور، کوئٹہ سمیت کئی شہروں میں ریلیوں اور تقاریب کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔ پاکستان بھر میں آج عام تعطیل ہے۔ سٹیٹ بینک سمیت تمام شیڈولڈ بینک و مالیاتی ادارے بھی بند رہیں گے۔ چاروں صوبوں، آزاد کشمیر ، گلگت بلتستان اور اسلام آباد میں یوم یکجہتی کشمیر کے سلسلے میں سرکاری اور غیر سرکاری سطح پر خصوصی پروگرام ہوں گے۔

وزیر اعظم عمران خان مظفرآباد میں آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی اور کشمیر کونسل کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔ راولپنڈی میں دن 2 بجے لال حویلی کے باہر تقریب ہو گی، جہاں پر عوامی مسلم لیگ کے سربراہ و وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد عوامی اجتماع سے خطاب کریں گے ، جس میں وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی آمد بھی متوقع ہے۔ جلسے کے بعد کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے ریلی بھی نکالی جائے گی۔

آزاد کشمیر کو پاکستان سے ملانے والے تمام چھ داخلی راستوں پر انسانی ہاتھوں کی زنجیریں بنانے کے لیے انتظامات کرلیے گئے ہیں۔ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں میں مختلف مقامات پر کشمیر میں ظلم وستم کو تصویری صورت میں نمایاں کیا گیا ہے۔ دارالحکومت کے اہم پلوں کو یوم یکجہتی کشمیر کے بینروں سے سجا دیا گیا ہے۔ سوشل میڈیا پر بھی اس حوالے سے مواد اپ لوڈ کیا جا رہا ہے۔

اہم شاہراہوں پر آزاد کشمیر کے پرچم آویزاں ہیں۔ پہلی بار یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر 5 فروری کو پارلیمنٹ ہاؤس اور ایوان صدر کے سامنے انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنائی جائے گی۔ ڈی چوک سے فاطمہ جناح پارک تک طویل انسانی ہاتھوں کی زنجیر بننے کا امکان ہے۔ وفاقی کابینہ کے ارکان بھی کشمیریوں سے پاکستان کے عوام کے مکمل یکجہتی کے اظہار کے لیے اس غیر معمولی سرگرمی میں شریک ہوں گے۔ انسانی ہاتھوں کی زنجیر کے بعد خصوصی پروگرام ہو گا۔ قومی، ملی اور کشمیری نغمے گائے جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں