وزیراعظم نے پٹرولیم مصنوعات میں اضافے کی تجویز منظور نہیں کی۔

اسلام آباد: (میڈیا ون نیوز) وزیراعظم عمران خان نے مہنگائی سے ستائی عوام کو ریلیف دیتے ہوئے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل کی جانب سے جاری ٹویٹ میں بتایا گیا ہے کہ آئل اینڈ ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے تقریباً 6 سے 7 روپے فی لیٹر تک پٹرولیم مصنوعات کی قیمت بڑھانے کی تجویز کی تھی۔

انہوں نے لکھا کہ وزیراعظم عمران خان نے یہ تجویز منظور نہیں کی۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مسلسل اضافے کے باوجود وزیراعظم نے اجازت نہیں دی ہے۔

خیال رہے کہ اوگرا کی جانب سے وزارت خزانہ کو بھجوائی گئی ایک سمری میں پٹرول 7 اور ڈیزل 6 روپے فی لٹر تک مہنگا کرنے کی تجویز دی گئی تھی۔

اوگرا کی سمری پر وزارت خزانہ نے سفارشات دینا تھی تاہم قیمتوں میں اضافے کا حتمی فیصلہ وزیراعظم عمران خان نے ہی کرنا تھا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی 15 فروری کو پٹرولیم مصنوعات مہنگا کرنے کی تجویز وزیراعظم نے مسترد کر دی تھی۔

اس سے قبل 15 فروری کو اوگرا کی جانب سے پٹرول کی قیمت میں14.07 روپے، ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 13.61 روپے فی لٹر اضافے کی تجویز دی گئی تھی۔

اس کے علاوہ مٹی کے تیل کی قیمت میں 10.79روپے کی سفارش کی گئی تھی۔ اوگرا نے لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 7.43 روپے اضافہ تجویز کیا گیا تھا۔

تاہم عوامی فلاح و بہبود کو مدنظر رکھتے ہوئے وزیراعظم نے پٹرولیم مصنوعات میں اضافے کی تجویز منظور نہیں کی۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت عوام کو ریلیف کی فراہمی کے لئے ہر حد تک جائے گی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل حکومت ڈھائی ماہ میں پیٹرولیم مصنوعات مسلسل 5 بار مہنگا کر چکی ہے۔

یکم دسمبر سے اب تک پیٹرولیم مصنوعات 16 روپے 37 پیسے تک مہنگی کی جاچکی ہیں۔ اسی عرصے میں پیٹرول 11 روپے 21 پیسے فی لٹر پہلے مہنگا کیا گیا۔

یکم دسمبر سے اب تک ہائی اسپیڈ ڈیزل 14 روپے 64 پیسے فی لٹر مہنگا کیا جا چکا ہے۔ اسی عرصے میں مٹی کا تیل 14 روپے 90 پیسے فی لٹر مہنگا کیا گیا۔ ڈھائی ماہ میں لائٹ ڈیزل 16 روپے 37 پیسے فی لٹر مہنگا کیا جا چکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں