راولپنڈی میں ملازمت کا جھانسہ دیکر 17 سالہ لڑکی سے مبینہ زیادتی

راولپنڈی: (میڈیا ون نیوز) تھانہ نیوٹاؤن کے علاقے فیض آباد میں ملازمت کا جھانسہ دیکر 17 سالہ لڑکی سے مبینہ زیادتی کا واقعہ پیش آیا۔

پولیس کے مطابق فیض آباد کے مقامی ہوٹل سے پولیس ایمرجنسی ون فائیو پر17 سالہ لڑکی کی جانب سے مدد کے لیے کال ملنے پر ایس ایچ او نیوٹاؤن انسپکڑ مرزا جاوید اقبال نے ٹیم کے ساتھ بروقت رسپانڈ کیا تو متاثرہ لڑکی نے موقف اختیارکیا کہ لطیف نامی شخص نے ملازمت دلانے کے لیے قصورسے بلوایا اور ملازمت دلانے کا جھانسہ دیکر مبینہ زیادتی کانشانہ بناڈالا۔

جس پر پولیس ٹیم نے آدھے گھنٹے کے اندرملزم کو گرفتارکرلیا جبکہ ہوٹل میں بغیر تصدیق کمرہ کرائے پر دینے پر ظفر نامی ہوٹل منیجرکوبھی گرفتارکرلیا گیا۔
متاثرہ لڑکی نے اپنے بیان میں کہا کہ لطیف نے اسلام آباد کے نجی اسپتال میں نرسنگ کی جاب کے انڑویو کیلئے بلایا، ملازمت کی ضرورت تھی اس لئے حامی بھرلی، یکم ستمبرکوصبع کال کرکے کہا انڑویو کے لیے آجاؤ اور گاڑی کا کرایہ دینے کی حامی بھی بھری، لاہورسے نجی ٹیکسی کمپنی کی گاڑی پراسلام آباد آگئی کرایہ لطیف نے آن لائن جمع کرادیا۔

بدھ کی شب لطیف گاڑی میں ڈرائیور کے ساتھ آیا، شب گیارہ بجے گاڑی چھوڑ کرچلی گئی اور لطیف ہوٹل کے کمرے میں لے آیا، لطیف زبردستی کرنے لگا مزاحمت کی توتشدد کرکے زیادتی کا نشانہ بنایا۔ لطیف واش روم گیا توچابی اور اسکا شناختی کارڈ اٹھا کرکمرہ باہرسے لاک کردیا۔ ہوٹل کے ہال میں آکرپولیس ایمرجنسی 15 پراطلاع دی۔

پولیس نے میڈیکل کروا کرملزم کے خلاف مقدمہ درج کرلیا جبکہ ہوٹل منیجرکے خلاف الگ سے مقدمہ درج کیا جارہا ہے۔ ایس پی راول ضیاء الدین کا کہنا تھا کہ ملزم کو قرارواقعی سزا دلوانے کے لئے تمام قانونی تقاضے پورے کئے جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں